2,973

مدرسہ کا قاری بچے سے زیادتی کرتے پکڑا گیا، جو توں ، تھپڑوں سے پٹائی

فیصل آباد (ویب ڈیسک) فیصل آباد میں بچے سے زیادتی کرنے کا ایک اور سکینڈل سامنے آگیا اور بچوں کے ساتھ زیادتی کی ویڈیو فلم بنانے کا انکشاف ، رضا آباد کے علاقہ میں اوباش قاری نے بچے کو مبینہ طور پر زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ لوگوں نے بچے کے ساتھ غیر اخلاقی حرکات کرتے ہوئے پکڑ لیا اور درگت بنانے کے بعد اوباش کو حوالہ پولیس کر دیا،مقدمہ درج ۔

روزنامہ خبریں کے مطابق علی ٹاﺅن کا رہائشی 15 سالہ زین کام کی غرض سے علاقہ کے مدرسہ میں قاری نوید کے پاس گیا تو قاری اسے بہلا پھسلا کر اپنے حجرے میں لے گیا اور اس کے ساتھ بدفعلی کر ڈالی. اپنے بیٹے کے واپس نہ آنے پر والدین نے تلاش شروع کر دی۔ اہل علاقہ بھی ہمراہ تھے کہ وہ بچے کی تلاش میں مدرسے جا پہنچے۔ جہاں اوباش قاری بچے کے ساتھ غیر فطری کھیل اور غیر اخلاقی حرکات کر رہا تھا کہ لوگوں نے اسے پکڑ کر تشدد کا نشانہ بنایا۔ اس پر تھپڑوں اور جوتوں کی بارش کر دی۔ معززین علاقہ نے مداخلت کر کے اوباش کو لوگوں سے نجات دلائی اور اس کو تھانہ رضا آباد پولیس کے حوالے کر دیا گیا۔

متاثرہ بچے کے لواحقین نے میڈیکولیگل حاصل کر کے اوباش کے خلاف مقدمہ کے اندراج کیلئے رضا آباد پولیس کی درخواست دیدی۔ جس پر پولیس نے قاری نوید کے خلاف مقدمہ درج کر لیا۔ اس واقعہ کے خلاف علاقہ میں شدید غم و غصہ پایا جاتا ہے اور اہل علاقہ نے اوباش قاری کو فوری طور پر مدرسہ سے نکالنے کا مطالبہ کیا ہے۔

تھانہ رضا آباد کے اے ایس آئی علی جواد کا کہنا تھا کہ واقعہ کا مقدمہ درج ہو چکا ہے۔ مگر دونوں کے درمیان صلح ہو گئی ہے۔ یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ ضلع قصور میں بچوں کے ساتھ بدفعلی اور ان کی ویڈیو فلمیں بنانے کا سکینڈل منظرِ عام پر آچکا ہے اور ایسا ہی ایک واقعہ چند یوم قبل فیصل آباد کے تھانہ منصور آباد کے علاقہ ملک پور میں سامنے آیا۔ جس کے بعد بچوں سے بدفعلی کرنے اور ان کی ویڈیو فلم بنانے کا فیصل آباد رضا آباد کے علاقہ میں سامنے آنے والا دوسرا واقعہ ہے اور ان واقعات سے قبل بھی کئی واقعات منظرِ عام پر آچکے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں