صدقہ ستر بلاؤں کو ٹالتا ہے 


0

صدقہ ستر بلاؤں کو ٹالتا ہے

ایک دفعہ کی بات ہے کہ ایک شخص کی ماں بےحد بیمار ہوگئی تھیں یہاں تک کہ آئی سی یو میں داخل تھیں ڈاکٹرز نے انہیں جواب دے دیا تھا اسے بتا دیا گیا تھا کہ ان کی زندگی چندد ہی دن کی ہے۔ وہ شخص بہت پریشان ہوگیا تھا وہ روز ہسپتال جاتا سارا دن والدہ کے پاس رہتا اور رات کو گھر چلا جاتا تھا وہ چاہ کربھی والدہ کو بچانے کے لئے کچھ کر نہیں پاتا تھا بس دل کڑھاتا رہتا تھا۔ روزرات کو گھر جاتے ہوئے وہ واپسی پہ اپنی گاڑی میں پیٹرول ضرور ڈلواتا تھا ایک دن وہ پیٹرول ڈلوانے رکا تو اسے ایک مانگنے والے نے صدا دی۔ اس شخص نے اس کو کچھ پیسے دے کر کہا کہ یہ میری والدہ کا صدقہ ہے۔ اس پہ مانگنے نے دعا کے لئے ہاتھ اٹھا دیئے۔ پھر وہ شخص گھرکو روانہ ہوگیا۔ صبح جب وہ روزآنہ کی طرح ہسپتال گیا تو والدہ کہ نہ پا کر افسردہ اور پریشان ہو کر رونے لگا پھر نرس سے والدہ کے بارے میں پوچھنے پہ بتایا کہ آپ کے والدہ کی طبیعت اچانک ٹھیک ہوگئی تھی تو ہم نے ان کو ٹھہلنے کے لئے کوریڈور میں بھیجا ہے وہ شخص ماں سے ملنے کوریڈور گیا اور پوچھا یہ سب کیسے ہوا؟ والدہ نے کہا کہ انہوں نے کہا کہ میں نے خواب میں دیکھا کہ ایک شخص ان کے لئے دعا کر رہا ہے صبح جب میں اٹھی تو میری طبیعت بالکل ٹھیک تھی اور اب تم دیکھ سکتے ہو۔

قارئین صدق ِ دل سے دیا ہوا صدقہ ہر مشکل میں کام آتا ہے اور دینے سے پہلے ہی قبول کرلیا جاتا ہے کیونکہ اللہ دلوں اور نیتوں کو خوب جانتا ہے۔ صدقہ ستر بلاؤں کو ٹالتا ہے اور دعا تقدیر کو بدل دیتی ہے۔ ضروری نہیں کہ صدقہ لاکھوں یا ہزاروں روپے ہو بلکہ جتنی استعطاعت ہو اتنا کسی غریب یا مستحق کو بتا کردے دینا چاہئیے کچھ نہ ہو تو بھی کوئی بات نہیں کیونکہ اپنے مسلمان بھائی سے مسکرا کر بات کرنا بھی صدقہ ہے۔


Like it? Share with your friends!

0

What's Your Reaction?

hate hate
0
hate
confused confused
0
confused
fail fail
0
fail
fun fun
0
fun
geeky geeky
0
geeky
love love
2
love
lol lol
0
lol
omg omg
0
omg
win win
0
win

0 Comments

Your email address will not be published. Required fields are marked *

لطیفوں کی دنیا